ن لیگ کے اہم رکن اسمبلی ضیاءالرحمن کو جعلی ڈگری کیس میں آج نااہل کردیا گیا۔

By | October 18, 2018

سپریم کورٹ نے آج مسلم لیگ ن کے اہم رکن خیبر پختون خوا اسمبلی سے ضیاءالرحمن کو جعلی ڈگری کی وجہ سے نااہل کر دیا ہے۔

آج سپریم کورٹ میں مسلم لیگ ن کے اہم رکن اسمبلی ضیاءالرحمن کے ِخلاف درج جعلی ڈگری کیس کی سماعت ہوئی ۔ تو عدالت نے ضیاءالرحمن کے خلاف کیس کی درخواست کو خارج کردیا۔ کچھ دن پہلے ضیاءالرحمن کو پشاور ہائی کورٹ نے تاحیات نااہل قرار دیا تھا۔ لیکن ضیاءالرحمن نے پشاور ہائی کورٹ کا فیصلہ نہ مانتے ہوئے۔ سپریم کورٹ میں اپیل کردی تھی۔

دوران سماعت چیف جسٹس کے پوچھے گئے سوالوں کا ضیاءالرحمن جواب نہی دے پائے۔ ضیاالرحمن کی ڈگری کے مطابق 1996 میں گھوٹکی سندھ میں میٹرک کیا تھا ۔ اور اس ٹائم ان کی عمر 16 سال تھی۔ پھر اسی سال 1996 میں ہی 4 ماہ کے بعد شہادت علیمہ کی 5 سالہ کورس کی سندھ بھی لے لی۔

اور اسی وجہ سے ضیاالرحمن کو جعلی ڈگری کیس کی وجہ سے نااہل قرار دے دیا گیا۔ آخر کوئی بندہ 1 ہی سال میں 5 سال کیسے گزار کیا۔ پشاور ہائی کورٹ میں اس کیس 14 مارچ 2017 کو سماعت ہوئی تھی اور پشاور ہائی کورٹ نے اسی دن اس کو تاحیات نااہل قرار دے دیا تھا۔۔ اس کے بعد انہوں نے سپریم کورٹ میں فیصلہ درج کرایا تھا۔

آپ کو یہ پوسٹ کیسی لگی اور آپ اس بارے میں کیا رائے رکھتے ہیں۔ نیچے دیے گئے کمنٹ بوکس میں ضرور بتائیے۔